Archive

Archive for the ‘Sad Poetry Wallpaper’ Category

Khuloos e Mohabbat

Parveen Shakir Ghazals



Apni Tanhai Mere Naam Pe

Phiray Ga Tu Bhi Yunhi Kubaku Hamari Trah

کیا میرے بن رہ لو گے تم۔۔۔۔۔۔

میں سوچتا ہوں کے جس دن .
موت کے سائے میرے ارد گرد منڈلائیں گے .
میرے دوست عزیز ساتھی سب . میرے پاس جمع ہو جائیں گے .
سنو گے جب تم میرے مرنے کی خبر
اڑیں گے ہوش تمھارے اور پاوں لڑکھڑایئں گے۔۔
…مجھے یقین ھے کے آخری بار دیکھنے کے لیئے
تمھارے قدم تمھیں میرے پاس کھینچ لایئں گے۔۔
میرے سرہانے لوگوں کا ہجوم ہو گا۔۔
ان کا رونا درو دیوار ہلایئں گے ۔۔
میری یادیں تمھیں توڑ دیں گی۔۔
پر آنسو تمھاری آنکھوں سے رک نہ پایئں گے۔۔
اور جب چل کر آو گے میری لاش کے پاس۔۔
اور تمہیں میرے عزیز میرا چہرہ دیکھایئں گے۔۔
بے جان جسم کو دیکھ کے سہہ لو گے تم?
سوچو!!
کیا میرے بن رہ لو گے تم۔۔۔۔۔۔

اب تیرا عکس فقط اپنی غزل میں ہوگا

چاندنی، جھیل نہ شبنم نہ کنول میں ہوگا
اب تیرا عکس فقط اپنی غزل میں ہوگا

اور اک سانس کو جینے کی تمنا کر لیں
ایک لمحہ تو ابھی دشتِ اَجل میں ہوگا

راکھ ماضی کی کُریدو، نہ پَلٹ کر دیکھو
آج کا دن بھی ہُوا گُم، تو وہ کل میں ہوگا

کیوں کسی موڑ پہ رُک رُک کے صدا دیں اُس کو
وہ تو مصروف مُصافت کے عمل میں ہوگا

جس سے منسوب ہے تقدیر ِ دو عالم کا مزاج
وہ ستارہ بھی تیری ظلف کے بَل میں ہوگا

ہجر والو! وہ عدالت بھی قیامت ہوگی
فیصلہ ایک صدی کا، جہاں پًل میں ہوگا

اُس کو نیندوں کے نگر میں نہ بساؤ محسن
ورنہ شامل وہی نیندوں کے خلل میں ہوگا

 

Dost Kia Khub Wafao Ka Sila Dety Hein

Muhabbat

Tanha Ghazal

Rishta Torde Ke Janne Walay

Rishta Torde Ke Janne Walay

Mujh Ko chorde Ke Janne Walay

Ab ki Eid per

mujhko jitnay card millay

un cardoon main

sab se pyara

sab se accha

pehla Card Tumhara hai

mujhko chorde ker janne walay

Zara Kaho To

yeah kis taraf ishara hai

Follow

Get every new post delivered to your Inbox.

Join 28 other followers